New, Insurance, Public, Government, Daily, Property, Rents

لاہور: خاتون کے مبینہ تشدد سے نوعمر ملازم ہلاک

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں ایک خاتون نے اپنے گھریلو ملازم کو مبینہ طور پر تشدد کر کے ہلاک کر دیا ہے۔

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ اکبری گیٹ کے علاقے میں پیش آیا اور ہلاک ہونے والا 16 سالہ اختر علی فوزیہ نامی خاتون کے گھر پر ملازم تھا۔
پاکستان کے'غیر محفوظ' بچے
لاہور: دس سالہ ملاز
مہ کی موت، مالکن کا اعترافِ جرمپولیس کے مطابق فوزیہ بی بی پنجاب اسمبلی کی ایک خاتون رکن کی صاحبزادی ہیں۔
اختر علی کے والد محمد اسلم نے اکبری گیٹ پولیس کو بتایا کہ ان کا بیٹا اختر اور بیٹی عطیہ اندرون اکبری گیٹ کی رہائشی فوزیہ بی بی کے گھر پر گذشتہ تین چار سال سے ملازم تھے۔
محمد اسلم کے مطابق اختر علی گذشتہ کچھ عرصے سے اپنے ساتھ فوزیہ بی بی کے ناروا رویے اور مبینہ تشدد کی شکایت کرتے رہتے تھے۔
اوکاڑہ کے رہائشی محمد اسلم نے پولیس کو بتایا کہ انھیں منگل کو اختر علی کی طبیعت خراب ہونے کی اطلاع ملی جس پر وہ اس کی خیریت دریافت کرنے لاہور آئے۔
محمد اسلم کے مطابق ان کی بیٹی عطیہ نے انھیں بتایا کہ دو روز قبل فوزیہ نے مبینہ طور پر لوہے کے ڈنڈے اور چمچ کے ساتھ اختر علی کو زدوکوب کیا تھا جس سے وہ زخمی ہو گئے تھے۔
اکبری گیٹ تھانے میں درج رپورٹ کے مطابق محمد اسلم نے الزام لگایا ہے کہ فوزیہ بی بی کے مبینہ تشدد سے آنے والے زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ان کا بیٹا اختر علی ہلاک ہوا۔
تھانہ اکبری گیٹ میں ڈیوٹی پر مامور پولیس اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ پولیس کو واقع کی اطلاع شام چھ بجے کے قریب دی گئی جس نے موقع پر پہنچ کر لاش کو قریبی ہسپتال منتقل کیا جہاں اس کا پوسٹ مارٹم بدھ کو کیا جائے گا۔
پولیس کے مطابق واقع کی ایف آئی آر درج کرنے کے بعد ملزمہ کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں تاہم وہ اپنی رہائش گاہ پر موجود نہیں تھیں۔
خیال رہے کہ گذشتہ چند ماہ کے دوران پاکستان میں گھریلو ملازمین پر تشدد کے متعدد واقعات منظرِ عام پر آئے ہیں جن کا ملک کی اعلیٰ عدالتوں کی جانب سے نوٹس بھی لیا گیا ہے۔


loading...